British parliamentarian’s letter to Boris Johnson over the inclusion of Pakistan’s name in red list #urduheadline

6


پاکستان کا نام ریڈ لسٹ میں شامل کرنے پر برطانوی ارکان پارلیمنٹ نے وزیراعظم بورس جانون کو احتجاجی خط لکھ دیا۔ ناز شاہ اور محمد یاسین نے مؤقف اختیار کیا کہ پاکستان کا نام سیاسی بنیادوں پر لسٹ میں شامل کیا گیا، بھارت افرانس میں کرونا کیسز پاکستان سے زیادہ ہیں۔

برطانوی ارکان پارلمینٹ ناز شاہ اور محمد ياسين نے برطانوی وزيراعظم بورس جانسن اور وزیر خارجہ کو الگ الگ خط لکھ دیئے، جس میں پاکستان کو ريڈ لسٹ ميں شامل کرنے پر سخت احتجاج کرتے ہوئے وضاحت طلب کرلی۔

برطانوی اراکین پارلیمنٹ کا خطوط میں کہنا ہے کہ بھارت اور فرانس میں کرونا کیسز پاکستان سے زیادہ ہیں مگر پاکستان کو سیاسی بنیادوں پر ريڈ لسٹ ميں شامل کرلیا گیا۔

مزید جانیے: برطانیہ نے پاکستان کو سفری پابندیوں کی ریڈ لسٹ میں شامل کردیا

وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے بھی پاکستان پر سفری پابندیوں کے برطانوی فیصلے پر سوال اٹھادیا۔ انہوں نے اپنے ٹویٹر پیغام میں ناز شاہ کی جانب سے بورس جانسن کو لکھا گیا خط شیئر کرتے ہوئے کہا کہ ہر ملک اپنے شہریوں کے تحفظ کیلئے فیصلے کرنے کا حق رکھتا ہے لیکن برطانوی حکومت کی جانب سے پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کے فیصلے سے یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ کیا ممالک کا انتخاب سائنسی یا خارجہ پالیسی کی  بنیاد پر کیا گیا۔



#urduheadline



.

Leave A Reply

Your email address will not be published.