کیا واقعی سابقہ مشرقی پاکستان ایک سیاسی ناکامی ہے؟؟? کتنا جھوٹ؟؟ اور کتنا سچ؟؟؟

جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے آخری خطاب میں میں اس بات کا ذکر کیا کہ سانحہ مشرقی پاکستان ایک سیاسی ناکامی تھی۔

کیا واقعی سابقہ مشرقی پاکستان ایک سیاسی ناکامی ہے؟؟? کتنا جھوٹ؟؟ اور کتنا سچ؟؟؟

پاک فوج کے سربراہ کے اس بیان کے بعد ملک میں ایک نئی بحث چھڑ گئی ہے۔جنرل قمر جاوید باجوہ کے مطابق سانحہ مشرقی پاکستان ایک سیاسی ناکامی ہے اگر کچھ دیر کے لئے اس بات کو درست مان بھی لیا جائے تو بھی بطور سیاستدان اس وقت ملک کے حکمران جنرل یحییٰ خان تھے۔

بطور آرمی چیف بھی جنرل یحییٰ خان ہی تھے تو اس صورتحال میں تمام تر ذمہ داری انہی پر عائد ہوتی ہے کیونکہ ملک کی تمام باگ ڈور انہی کے ہاتھ میں تھی۔اگر تاریخ کا بغور مطالعہ کیا جائے تو پاکستانی فوج عید کی جارحانہ پالیسی کی وجہ سے اور کچھ پاکستانی جرنیلوں کی غداری کی وجہ سے جو کہ دراصل بنگالی تھے اور جاکے انڈیا فوج سے جا ملے انہوں نے پاکستان کے اہم راز انڈین آرمی کو دیے جو کہ پاکستان کی شکست کی ایک بڑی وجہ بنی۔

بھارت کے مختلف ذرائع اعظم دنیا کے مختلف فورم پر اس بات کو کھلے ہم تسلیم کرتے رہے ہیں کہ بنگلہ دیش کے قیام میں ان کا ہاتھ تھا اور پاکستانی فوج نے شکست تسلیم کی۔اصل بات یہ ہے کہ ایک ایسا موضوع جو کہ پاکستانی قوم اور فوج کے لئے تکلیف کا باعث ہے اسے ایک نازک ملک کی صورتحال کے وقت ہوا دینا یعنی نئے سرے سے اس پر بحث چھڑ دینا کہاں کی عقلمندی ہے اور اس کی ضرورت کیوں پیش آئی؟؟؟

پاک فوج کے سربراہ نے ان سیاستدانوں کا نام لیے بغیر بالخصوص چیئرمین عمران خان کو تنقید کا نشانہ بنایا۔