Kohat: Girl murdered after rape, 40 detained #urduheadline

-

Girl-Missing-and-Rap-Art

کوہاٹ ميں ساڑھے تين سال کی بچی کے قتل میں 40 افراد کو حراست میں لے لیا جبکہ 50 کے ڈی این اے سیمپلز لے لیے گئے۔

وزيراعظم عمران خان کی ہدايت پر چيئرمين کشمير کميٹی شہریار آفریدی متاثرہ بچی کے گھر پہنچے اور ورثا کو انصاف کی يقين دہانی کرائی۔

شہریار آفریدی نے یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ يہ بچی قوم کی بیٹی تھی، دل خون کے آنسو رو رہا ہے۔ آئی جی خيبرپختونخوا معاملے کی خود نگرانی کر رہے ہیں، قاتل کو عبرتناک سزا دلوائی جائے گی۔

کوہاٹ: ساڑھے تین سالہ بچی ریپ کے بعد قتل

نماز جنازہ کے بعد بچی کو مقامی قبرستان ميں سپردِ خاک کر ديا گيا۔ ميڈيکل رپورٹ ميں بچی سے ریپ ثابت ہوچکا ہے۔

رشتے داروں کے مطابق بچی 24 مارچ کو دوپہر تين بجے گھر سے دکان جانے کے ليے نکلی اور پھر لاپتا ہوگئی تھی۔ 25 تاريخ کو بچی کو قتل کرکے دو کلو ميٹر کے فاصلے پر گھر سے دور ايک نالی ميں اس کی لاش پھينکی گئی تھی۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ اس کو سرعام چوک پر لٹکايا جائے۔

بچی کے لواحقین اور اہل علاقہ نے لاش یونیورسٹی روڈ پر رکھ  کر احتجاج کیا تھا۔ دوسری جانب پوسٹ مارٹم میں غفلت برتنے پر ضلعی انتظامیہ نے 2 لیڈی ڈاکٹروں کو معطل کر دیا تھا۔


-


#urduheadline



.

-

اپنا تبصرہ بھیجیں